RSS

MIYAAON MIYAAON

04 Jul

MIYAAON MIYAAON

 

ایک شخص پئے ہوئے میرے پاس آیا- اس کے ہاتھ میں ایک تار تھا جو اس کی منگیتر کے نام تھا- اس نے بتایا کہ اگر یہ تار اسی وقت نہ بھیجا گیا تو منگنی ٹوٹ جانے کا اندیشہ ہے تار کے الفاظ یہ تھے

 

میائوں، میائوں، میائوں، میائوں، میائوں،اور پھر میائوں

 

میں نے اسے بتایا کہ اسی لاگت میں وہ ایک اور لفظ شامل کر سکتا ہے

 

 کچھ دیر سوچنے کے بعد اس نے مجھ سے پوچھا کہ کون سا لفظ شامل کیا جائے? میں نے بتایا کہ کیوں نہ ایک اور میائوں لکھ دی جائے – وہ سر ہلا کر بولا – ایک اور میائوں، ہرگز نہیں – کوئی تار پڑھے گا تو کیا کہے گا

 

Ek shakhs piye hue mere pass aya us ke hath mein ek taar tha. Jo us ki mangetar ke naam tha. Us ne bataaya ke agar yeh taar usi waqt na bheja gaya to mangni toot jaane ka andesha hai. Taar ke alfaaz yeh the:

miaaoN, miaaoN, miaaoN, miaaoN, miaaoN, aur pher miaaoN,

maiN ne use bataya ke isi laagat meiN woh ek aur lafz shaamil kar sakta hai. Kuchh der sochne ke baad us ne mujh se poochha ke kaun saa lafz shaamil kya jaye. main ne bataaya ke kyooN na ek aur miaaoN likh di jaye. Woh sar hila kar bola, ek aur miaaoN, hargiz nahiN, koyi taar paRhe ga to kya kahe ga.

(From Shafeequr Rahaman’s ‘Pachhtaawe’)

Advertisements
 
2 Comments

Posted by on July 4, 2011 in Jokes

 

2 responses to “MIYAAON MIYAAON

  1. MASOOD

    July 4, 2011 at 5:30 pm

    Bahut Khoob

     
  2. Rafiullah Mian

    July 6, 2011 at 11:00 pm

    Dilchisp aor ramz se bharpoor.

     

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: